Victim Sami Ur Rehman in Qasoor
مقتول سمیع الرحمن

دوستی نہ کرنے پر پیٹرولنگ پولیس کے کانسٹیبل نے 18 سالہ حافظ قرآن کو کوگولیاں مار کر قتل کردیا۔

دوستی نہ کرنے کی سزا موت

دوستی نہ کرنے کی سزا موت

Posted by 24 News HD on Sunday, May 24, 2020

پنجاب کے شہر قصور کے علاقے کھڈیاں خاص میں پیٹرولنگ پولیس کے کانسٹیبل نے مبینہ طور پر ناجائز تعلقات استوار کرنے سے انکار کرنے پر 18 سالہ حافظ قرآن نوجوان کو گولیاں مار کر قتل کردیا۔
پولیس نے ملزم کو حراست میں لے کر تفتیش شروع کردی ہے۔

Police constable Masoom Ali
پولیس کانسٹیبل معصوم علی

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر #JusticeForSamiUrRehman ٹاپ ٹرینڈ بن چکا ہے اور صارفین مقتول کو فوری انصاف کی فراہمی اور ملزم کو سخت سے سخت سزا دینے کا مطالبہ کررہے ہیں۔ دوسری طرف سوشل میڈیا صارفین نے اس خدشے کا بھی اظہار کیا کہ کہیں پولیس والے اپنے پیٹی بند بھائی کو بچانے کیلئے کیس کو کمزور ہی نہ کردیں یا ورثاء کو ہراساں کرنے کی کوشش نہ کریں۔

ایک سوشل میڈیا صارف نے مقتول کی نعتیہ کلام پڑھتے ہوئے ویڈیو شیئر کی اور بتایا کہ سمیع الرحمن نے اس برس رمضان المبارک میں نماز تراویح کی امامت کراوئی تھی۔ پولیس کانسٹیبل اسے اپنی ہوس کا نشانہ بنانا چاہتا تھا لیکن مزموم عزائم میں ناکامی کے بعد عید کے پہلے دن نوجوان کو قتل کردیا۔

عبید بھٹی نے کہا کہ 24 مئی 2020, عید الفطر کے دوسرے روز پولیس کانسٹیبل معصوم علی نے حافظ قرآن نوجوان سمیع الرحمان کو برائی پر آمادہ کرنے کی کوشش کی, ناکامی پر گولی مار کر قتل کردیا, یہ واقعہ ضلع قصور کی تحصیل کھڈیاں میں پیش آیا, قصور میں ایسے واقعات آئے روز کا معمول ہیں۔

1 COMMENT

Your Comments Will help Us to Improve.