‏حیدرآباد رحمان ٹاون میں7 میں میئر حیدرآباد سیدطیب حسین جب روڈ کا افتتاح کرنے آئے جو بنے سے پہلے ہی ٹوٹنے لگا شہری نے احتجاج کیا اور جب میئرصاحب سے شکوہ کیا تواس پر میئر نے اگنور کردیا اس موقع پر موجود سیکٹر اور یوسی زمیداران نےدھکے دئیے اورمیئر خاموشی سے چلتے بنے کب تک جالی کاموں پرافتتاح ہوتا رہیگا غریب عوام کا ان نمائندوں اور حکمرانوں سے سوال ؟

ماضی میں بھی ہر حکومتوں میں ایسا ہوا ہے ،عوام جن نمائندوں کو اپنے ووٹوں سے منتخب کرتی ہے وہ الیکشن سے پہلے تو بڑے دعوے کرتے ہیں مگر بعد میں عوام کا احتسال کرتے ہیں ۔

حیدرآباد سندھ  کا دوسرا بڑا شہر ہے۔ یہ 1935ء تک سندھ کا دارالخلافہ تھا اور اب ایک بڑے ضلع کی حیثیت رکھتا ہے۔ مگر پیپلز پارٹی یہاں دہائیوں سے حکومت کر رہی مگر عوام کی حالت زار میں رتی برابر بھی فرق نہیں آیا۔ وڈیو میں واضح طور پر دیکھا جاسکتا ہے جب مئیر حیدر سید طیب حسن اس روڈ کا افتتاح کرنے آئے جو ٹوٹ شروع ہو چکی ہے تو شہری نے ان سے شکوہ کیا تو بجائے اسکی شکایت سننے کے شہری کو ان کے سامنے دھکے دیے گئے اور مئیر صاحب شہری کو ذلیل ہوتا دیکھتے رہے ۔

Vedio: from YouTube

Your Comments Will help Us to Improve.