Man arrested for abusing 15-year-old boy inside masjid in Gujrat
پولیس نے تیزترین کاروائی کرتے ہوئے ملزم تبریز ولد شبیر کو گرفتار کر لیا۔

گجرات کے گاؤں پوٹھی میں انسانیت کو شرما دینے والا واقعہ پیش آگیا جہاں اعتکاف میں بیٹھنے والے پندرہ سالہ بچے کے ساتھ زیادتی کی کوشش کی گئی ہے، پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے واقعے کا مقدمہ درج کر لیا۔

FIR Against the man accused of child-abuse in Gujrat

صحافی عمیر سولنگی نے ایف آئی آر کی ایک تصویر شیئر کی جس کے متن کے مطابق اعتکاف میں بیٹھے پندرہ سالہ عادل حسین کے والد کا پولیس کو دی گئی درخواست میں کہا تھا کہ میرا پندرہ سالہ بیٹا عادل حسین جو کے نویں جماعت کا طالب علم ہے، گجرات کے علاقے پوٹھی میں واقع نورانی مسجد میں اعتکاف میں بیٹھا تھا۔

میں جب اسے کھانا دینے کے لیے مسجد میں پہنچا تو میں نے اپنے بیٹے کی چیخنے کی آواز سنی۔اپنے بیٹے کے چیخنے کی آواز سن کر جب میں موقع پر پہنچا تو ملزم تبریز میرے بیٹے کے ساتھ زبردستی بدفعلی کی کوشش کر رہا تھا، جو مجھے دیکھ کر موقع سے فرار ہو گیا۔

پولیس کو دی گئی درخواست میں بچے کا والد کا کہنا تھا کہ مسجد جہاں لوگ عبادات کرنے آتے ہیں۔ وہاں میرے بچے کے ساتھ بدفعلی کی کوشش کرنا انتہائی افسوسناک ہے۔لہذا ملزم کے خلاف سخت سے سخت قانونی کارروائی کی جانی چاہیے۔

جس پر پولیس نے مقدمہ درج کرکے ملزمان کی گرفتاری کے لیے اس کی تلاش شروع کر دی، اور زیادتی کی کوشش کا نشانہ بننے والے بچے کے والد کو پولیس نے یقین دہانی کروائی۔

Man arrested over child-abuse in Gujrat

بعد ازاں ملزم تبریز ولد شبیر کو پولیس نے کاروائی کرتے ہوئے گرفتار کر لیا۔

Your Comments Will help Us to Improve.